اب کوئی بچ کے دکھائے ، کپتان نے اپنےہی کھلاڑیوں کے چھکے چھڑا دئیے ،جانئیے

اسلام آباد ( ویب ڈیسک ) معلوم ہوا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے کابینہ ارکان اور قریبی ساتھیوں کی سرگرمیوں سے باخبر رہنے کیلئے اقدامات شروع کر دیئے ہیں۔روزنامہ جنگ کے ذرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیر اعظم نے اس مقصد کیلئے وفاقی خفیہ ایجنسی کو ڈیوٹی سونپ دی ہے اور انہیں ہدایت کی

گئی ہے کہ وہ منفی سرگرمیوں کے حوالے سے انہیں باخبر رکھیں۔اخباری ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نے منگل کو ہونے والے کابینہ اجلاس میں ایک مشیر کے ساتھ سخت رویہ اختیار کیا، وزیر اعظم کو مفصل خفیہ رپورٹس موصول ہو رہی ہیں۔اسی طرح وزیراعظم کے ایک قریبی ساتھی کے ساتھ بھی تعلقات تناﺅ کا شکار ہیں، وزیراعظم کو موصول سیکورٹی رپورٹس میں بعض وزرا ءکو بہت مخلص بھی قرار دیا گیا ہے۔دوسری جانب ایک خبر کے مطابق سینئر تجزیہ کار عمران یعقوب نے دعویٰ کیا ہے کہ اسی طرح بُری گورنسس کرتے رہےتو اسٹیبلشمنٹ حکومت برداشت نہیں کرے گی ، وزیر اعظم عمران خان کو کچھ کام کرنا ہوگا۔ تفصیلات کے مطابق سینئر تجزیہ کار کا نجی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہنا ہے کہ گورننس اسی طرح رہی تو اسٹیبلشمنٹ حکومت برداشت نہیں کرے گی ۔ ان کا کہنا ہے کہ وزیرا عٖظم عمران خان مافیا کا نام نہیں لیتے۔ عمران خان اپوزیشن پر آرٹیکل 6 لگانے کی بات اس لئے کرتے ہیں تا کہ بُری گورننس سے توجہ ہٹائی جائے۔ سربراہ جمعیت علماء اسلام (ف)مولانا فضل الرحمان کی گرفتار پر بات کرتے ہوئے عمران یعقوب کا کہنا تھا کہ انہیں تقریر کی بنا پر گرفتار کرنا ممکن نہیں ہے۔ تاہم مولانا صاحب احتجاج اس وقت کریں گے جب ان کو اشارہ ملے گا۔واضح رہے فاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد فوہدری کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان نے کمال دیدہ دلیری سے تسلیم کیا ہے کہ ان کا دھرنا حکومت کیخلاف ایک سازش تھی، جس میں کئی نام نہاد جمہوریت نواز سیاسی جماعتوں نے حصہ ڈالا، مولانا کا یہ بیان کھلم کھلا بغاوت کے زمرے میں آتا ہے ان پر فوری طور پر آرٹیکل 6 کا مقدمہ ہونا چاہئے۔