وزیر اعلی سندھ کی گاڑی کو حادثہ ، اصل حقائق منظر عام پر آگئے ،جانئیے

اسلام آباد(نیوز ڈیسک ) اسلام آباد میں بلاول بھٹو کی نیب پیشی کے موقع پر ایک حادثہ پیش آیا جس میں وزیراعلیٰ سندھ کی گاڑی چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کے پروٹوکول سے ٹکرا گئی۔یہ واقع نیب اولڈ لاہور ہیڈ کوارٹر کے باہر پیش آیا جہاں بلاول بھٹوپیشی کے لئے آ رہے تھے۔

پیشی سے پہلے ایک حادثہ پیش آیا جس میں وزیراعلیٰ سندھ کی گاڑی بلاول بھٹو کے پروٹوکول سے ٹکرا گئی۔حادثے کے وقت گاڑی میں مراد علی شاہ اور راجہ پرویز اشرف موجود تھے ۔واضح رہے کہ یہ واقعہ نیب ہیڈکوارٹر کے باہر پیش آیا جہاں چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کی پیشی تھی۔سنیب نے بلاول بھتو کو اومنی گروپ اور آمدن سے زیادہ اثاثوں کے کیس میں طلب کیا ہوا ہے۔پیشی کے بعد نیب نے بلاول بھٹو کو کہا ہے کہ وہ اومنی گروپ کے 2008 سے 2019 تک کا ریکارڈ لے کر آئیں۔ریکارڈ جمع کروانے کے لئے بلاول بھٹو کو 10 دن کا وقت دیا گیا ہے۔یادرہے کہ بلاول بھٹو کی نیب پیشی نے میڈیا اور سیاسی ماحول کو گرم کیا ہوا ہے۔ گزشتہ روز راولپنڈی میں نیب پیشی کے موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ اگر میں گرفتارہوا تو آصفہ بھٹو میری آواز ہوں گی۔ بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ میرے بارے میں خود چیف جسٹس نے کہا تھا کہ بلاول بے گناہ ہے، پھر بھی دسمبر میں مجھے نوٹس بھیج دیا گیا ہے۔اگرمجھے گرفتار کیا گیا تو میری آواز آصفہ بھٹو ہو گی۔ لیکن ایسی خبریں بھی موصول ہوئی ہیں جس میں کہا جا رہا ہے کہ اسلام آباد میں بلاول بھٹو کی نیب پیشی کے موقع پر ایک حادثہ پیش آیا جس میں وزیراعلیٰ سندھ کی گاڑی چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کے پروٹوکول سے ٹکرا گئی حادثے کے وقت گاڑی میں مراد علی شاہ اور راجہ پرویز اشرف موجود تھے۔