ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو امریکہ کے حوالے کس نےکیا ؟ تہلکہ خیز انکشافات سامنے آگئے ،جانئیے

اسلام آباد (ویب ڈیسک) آئی ایس آئی کے سابق جی و سابق چیئر مین جوانئٹ آف سٹاف جنرل احسان الحق نے واضح الفاظ میں کہا ہے کہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو پرویز مشرف یا کسی پاکستانی نے امریکہ کے حوالے نہیں کیا تھا بلکہ افغانستان سے امریکی فوج کے ہاتھوں گرفتار ہوئی تھی،ہم نے کبھی بھی کسی خاتون یا مرد کو امریکہ کے حوالے نہیں کیا یہ سب غلط فہمیاں ہیں۔ اپنے حالیہ دورہ آسٹریلیا کے دوران سنڈی کی میکائیری یونیورسٹی میں منعقدہ ٹیبل ٹاک پر آسٹریلیا میں مقیم پاکستانی کمیونٹی سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے واضح کیا کہ ہم نے کبھی بھی کسی پاکستانی کو امریکہ کے حوالے نہیں

کیا یہ سب غلط کہا ہے ہے کہ کسی پاکستانی نے عافیہ صدیقی کو امریکہ کے حوالے کیا۔ ہم نے امریکہ کو واضح کر رکھا تھا کہ پاکستانی تو در کنار کوئی چائینیز یا سعودی بھی امریکہ کے حوالے نہیں کریں گے۔ دوسری جانب معروف صحافی حامد میر کا اپنے حالیہ کالم میں کہنا ہے کہ 2003ء میں جبری گمشدگیوں کے خلاف یہ پہلی موثر آواز تھی جو عمران خان نے بلند کی تھی . عمران خان کو اپنے پروگرام میں بلانے پر حکومت ناراض ہوئی تھی تو اس وقت کے وزیراعظم میر ظفر اللہ جمالی نے مہربانی کرتے ہوئے ہمیں حکومت کے غضب سے بچا لیا . لیکن عمران خان عافیہ صدیقی کے لیے آواز اٹھاتے رہے.حامد میر نے اپنے کالم میں یہ بھی لکھا ہے کہ سابق وزیراعظم شوکت عزیز نے مجھے اس وقت بلایا تھا اور کہا تھا کہ عمران خان ایک گمراہ آدمی ہے جو پرویز مشرف کی نفرت میں القاعدہ اور طالبان کے ہاتھوں کھیل رہا ہے.اس دوران عمران خان نے برطانوی صحافی ریڈلے کے ہمراہ پریس کانفرنس کی اور دعویٰ کیا کہ عافیہ صدیقی افغانستان کی بگرام جیل میں قید ہے،2007ء میں مشرف حکومت کے خلاف وکلاء کی تحریک نے حالات ہی بدل دئیے. مشرف نے اپنا اقتدار ڈولتا دیکھ کر عافیہ صدیقی کو افغانستان کے شہر غزنی سے گرفتار کروا کر امریکہ پہنچا دیا.پرویز مشرف کا اقتدار تو 2008ء میں ختم ہو گیا۔