احسان فراموش ملک۔۔۔!!! شہید جنرل قاسم سلیمانی کس طرح امریکہ کی مدد کرتے رہے؟ تفصیلات نے اُمت مسلمہ کو چکرا کر رکھ دیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) ڈاکٹر شاہد مسعود کا کہنا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی ہلاکت سے قبل بیرود گئے وہاں انکی سید حسن نصر اللہ سے ہوئی اور ان سے ملنے کے بعد وہ دمشق سے بغدار پہنچے۔ تفصیلات کے مطابق ایک نجی ٹی وی چینل کو انٹر ویو دیتے ہوئے سینئر صحافی و تجزیہ نگار

ڈاکٹر شاہد مسعود کا کہنا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی نے امریکا کی سب سے زیادہ مدد کی تھی ایک دور میں انھوں نے امریکا سے ساتھ بہت کام کیا۔ انھوں نے صدام حسین، طالبان اور داعش کے خلاف لڑنے میں امریکہ کی مدد کی تھی۔ انکا کہنا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی تہران ایئر پورٹ سے دمشق گئےپھر بیرود پہنچے جہاں انکی ملاقات سید حسن نصر اللہ سے ہوئی اور پھر وہ واپیس دمشق آئے اور ایک گھنٹہ پانچ منٹ کی فلائٹ لے کر بغداد آئے۔ جہاں انھیں امریکی حملے میں قتل کر دیا گیا۔ یاد رہے کہ گزشتہ روز بغداد ایئرپورٹ پر ہونے والے حملے میں جنرل قاسم سلیمانی کو قتل کر دیا گیا تھا۔ آج اس واقع کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آگئی ہے۔ ویڈیو کے منظر عا م پر آتے ہی ویڈیو وائرل کر دی گئی۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جنرل قاسم سلیمانی کو ایک ڈرون حملے میں بغدار ایئرپورٹ پر مارا گیا تھا ۔ سی سی ٹی وی فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کس طرح ڈرون کے ذریعے ایئرپورٹ کو نشانہ بنایا گیا۔ ازہ ترین خبروں کے مطابق قاسم سلیمانی کے خلاف ہیل فائر مزائل کا استعمال کیا گیا تھا ۔ اس سے قبل یہ میزائل سیریا میں استعمال کیا گیا تھا۔تفصیلات کے مطابق یہ حملہ امریکہ کی جانب سے کیا گیا تھا جس میں قاسم سلیمانی کو ان کے ساتھیوں سمیت قتل کر دیا گیاتھا۔ی جانب سے اس حملے کی ذمہ داری کو نہ صرف قبول کیا گیا بلکہ آج صبح امریکہ کی جانب سے بغداد میں ایک اور فضائی حملہ کروا دیا گیا تھا جس میں بھی ابھی تک 6 لوگوں کے جانبحق ہونے کی اطلاعات ہیں۔ یادرہے کہ جنرل قاسم سلیمانی گزشتہ روز کچھ اہم ملاقاتوں کے لئے بغداد میں موجود تھے۔ اسی دورا ن امریکہ کی جانب سے ان پر میزائل داغا گیا جس میں وہ جان کی بازی ہار گئے۔ گزشتہ روز کئے جانے والے ڈرون حملے کے بعد ایران نے بھی امریکہ سے بدلہ لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ ایران کے اس فیصلے کے بعد امریکہ بھی خاموش نہیں بیٹھ رہا اوردونوں ممالک اس وقت خظے میں کشیدگی پھیلنیے کی وجہ بن رہے ہیں۔ واضح رہے کہ

امریکہ کے کل کئے جانے والے حملے کو بعد ڈونلڈ ٹرمپ کا امریکہ کے اندر سے بھی مخالفت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور ساتھ ی ساتھ خطے میں دوسرے ممالک کی جنب سے تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ جنرل قاسم سلیمانی پر حملے کی سی سی ٹی وی فوٹیج منظر عام پر آنے کے بعد اس بات کا بھی اندازہ لگایا لیا گیا ہے کہ کس میزائل سے حملہ کیا گیاتھا۔ قاسم سلیمانی کے خلاف استعمال ہونے والا میزائل ہیل فائر مزائل تھا۔