بریکنگ نیوز۔۔۔!!! چین بھی امریکہ کے خلاف میدان میں آگیا، ایران کے ساتھ رابطہ کر کے بڑا اعلان کر دیا

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چین بھی امریکا کے خلاف میدان میں آگیا، چینی وزیر خارجہ وانگ ژی کا کہنا ہے کہ امریکہ کو بات چیت کے ذریعے مسائل حل کرنے چاہیں۔ تفصیلات کے مطابق چینی وزیر خارجہ وانگ ژی نے ایرانی ہم منصب کو ٹیلیفون کیا۔ چینی وزیر خارجہ وانگ ژی کا کہنا ہے کہ امریکہ کو

بات چیت کے ذریعے مسائل حل کرنے چاہیں، امریکا طاقت کے استعمال سے باز رہے۔ ایرانی جنرل کے قتل کی مذمت کرتے ہیں۔ یاد رہے کہ اس سے قبل ایران کی جانب سے قدیم روایتی طرز میں جنگ کا اعلان کر دیا گیا تھا۔ ایک میڈیا رپورٹ کے مطابق مقدس شہر جمکران کی مسجد امام زمانہ میں سرخ پرچم لہرا دیا گیا تھا۔سرخ پرچم کا لہانہ باقاعدہ جنگ کا اعلان ہوتا ہے۔اس سے قبل مسجدجمکران پر ہمیشہ سبز پرچم لہراتا رہا ہے۔ قدیم فارس اور عرب روایات میں سرخ پرچم جنگ جاری ہونے کی علامات کہلاتا ہے۔جمکران شہر کی یہ مسجد انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ یہ مسجد امام مہدی سے منسوب سمجھی جاتی ہے۔اس مسجد پر اس سے قبل کبھی سرخ پرچم نہیں تھا تاہم قاسم سلیمانی کے قتل کے بعد اس مسجد پر سرخ پرچم لہرایا گیا تھا۔ جب کہ دوسری جانب ایرانی فوجی ترجمان بریگیڈیئر جنرل رمضان نے کہا تھا کہ ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کے قتل پر امریکا کی خوشی جلد سوگ میں تبدیل کر دیں گے۔ ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کے بعد عراق سے ملحق سرحد پر ایرانی لڑاکا طیاروں کی پروازیں جاری تھیں۔ امریکہ بھی مشرق وسطیٰ میں مزید تین ہزار فوجی بھیجنے کی تیاری کر رہا تھا جبکہ اسرائیل نے شام اور لبنان سے ملحقہ اپنی سرحد پر سکیورٹی بڑھا دی تھی۔ ایرانی وزیر خارجہ نے سرکاری ٹی وی کو انٹرویو میں کہا تھا کہ امریکہ نے بہت بڑی غلطی کی ہے ۔ عراقی خودمختاری اور عالمی قوانین کی خلاف ورزی کی گئی۔ جواد ظریف نے کہا تھا کہ ایران کسی بھی وقت اور انداز میں جواب دینے حق رکھتا ہے۔اقت اورجرائم کے ذریعے پالیسیوں پر پیش رفت دنیا کے لیے ناقابل قبول ہے۔انہوں نے کہا تھا کہ واقعے پر ایران نے سوئس سفیر کو ہی دن دو مرتبہ وزارت خارجہ طلب کرکے احتجاج ریکارڈ کرایا تھا۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز ایرانی جنرل قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے ٹھیک 24 گھنٹے بعد عراق میں ایک اور فضائی حملے میں پانچ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق عراقی حکام نے بتایا ہے کہ بغداد کے شمال میں ایران کی حمایت یافتہ ملیشیا کو لے جانے والی دو کاروں کو فضائی حملے میں نشانہ بنایا گیا ہے۔ ایران کی حمایت یافتہ پاپولر موبلائزیشن فورسز نے بھی فضائی حملے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ شمال میں واقع تاجی میں اسٹیڈیم کے قریب ایک میڈیکل قافلے کو نشانہ بنایا گیا ہے